اللہ بس شرک ہی کو معاف نہیں کرتا اس کے سواء دوسرے جس قدر گناہ ہیں وہ جس کے لئے چاہتا ہے معاف کر دیتا ہے اللہ کے ساتھ جس نے کسی اور کو شریک ٹھہرایا اس نے تو بہت ہی بُرا جھوٹ تصنیف کیا اور بڑے سخت گناہ کی بات کی۔ (پارہ ۵ سورہ النساء آیت ۴۸)

طلباء لون کے لئے کس طرح درخواست دیں

طلباء لون کے لئے کس طرح درخواست دیں

طلباء لون کے لئے کس طرح درخواست دیں?  درخواست جمع کروانے کیلئے 12 اقدامات:۔


  اسٹوڈنٹ لون کےلئے درخواست کا ایک جامع اصول:۔

ایک بار جب طلباء کا ایڈمیشن کالج میں ہو جاتا ہے، تو پھر ضرورت مند طلباءاسکالر شپس یا لون کے لئے درخواست دے سکتے ہیں، جو ان کے مطالعاتی دور میں ان کی مالی اعانت میں معاون ثابت ہوتا ہے۔لیکن یہاں یہ سوال ہے کہ طلباء لون کے لئے کس طرح درخواست دیں؟ اس کے لئے انہیں پہلے پہل کسی اسکالرشپ یا پھر کسی ایسی آرگنائزیشن کو ڈھونڈنا ہوتا ہے یہاں وہ اسٹوڈنٹ لون کے لئے اپلائی کر سکیں۔

اسے پڑھیں:۔ انسانی خیالات مصنوعی اعضاء کو وائرلیس سے کنٹرول کریں گے

ایک نئے درخواست دینے والے فرد کی حیثیت سے، انہیں کچھ ایسے اقدامات اٹھانے ہوتے ہیں کہ درخواست دینے کا پورا عمل کسی بھی قسم کی پریشانی سے پاک ہو۔ کالجز بورڈ کے ذریعے کئے گئے ایک سروے کے مطابق، اسٹوڈنٹس کی ایک سرکاری کالج کی سالانہ فیس تقریباً  $9,410  کے برابر ہے جب کہ ایک نجی کالج میں سالانہ فیس $32,410 کے برابر ہے۔ اس سے زیادہ تر اسٹوڈنٹس کے لئے کالج کی فیس ناقابل برداشت ہو جاتی ہے۔ لہذا طلباء کے اسٹوڈنٹ لون یا اسکالرشپس کے لئے درخواست دینا ضروری ہوتا ہے۔

طالب علم کے درخواست دیتے وقت اقدامات:۔

ذیل میں، ہم نے آپ کو ایک جامع منظم ہدایت نامہ فراہم کیا ہے کہ آپ کس طرح اسٹوڈنٹ لون کے لئے کامیابی کے ساتھ درخواست دے سکتے ہیں۔یہ آپ کے لئے اس بات کی ضمانت ہو گا کہ آپ کالج کی مشکل زندگی میں اپنی اسٹڈی کو جاری رکھنے کے لئے آپ کے پاس کافی مالی اعانت موجودہے۔

1) طلباء قرضوں کو اپنا آخری اختیار بنائیں:۔

اس سے پہلے کہ آپ اسٹوڈنٹ لون کے لئے اپلائی کریں، آپ کو یہ یقین کر لینا چاہیے کہ آپ کے پاس آپ کی مالی مدد کا اور کوئی اختیار نہیں ہے۔جس تک آپ رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔ اسٹوڈنٹ لون کے علاوہ ، طلباء کے پاس کالج کی فیس ادا کرنے کا سب سے عام طریقہ یہ ہے۔

2)  اسکالرشپس:۔

اسکالرشپس، اسٹوڈنٹس لون سے بہتر ہیں، کیوںکہ ایک طالب علم کو اسکالر شپ کی رقم واپس نہیں کرنا ہوگی۔ جبکہ اسٹوڈنٹس لون اس کے بالکل برعکس ہے۔ اسکالرشپس اعلیٰ تعلیمی سرگرمیوں یا کھیلوں کی سرگرمیوں کی بنا پر حاصل کی جا سکتی ہے۔ طلباء انٹرنیٹ کی بدولت بہت سے دستیاب اسکالرشپس ڈھونڈ سکتے ہیں۔ طلباء اسکالرشپس کے مواقع حاصل کر سکتے ہیں:۔

  • کالجز ، (Colleges)
  • مخیر حضرات، (Philanthropists)
  • غیر منفعتی تنظیمیں، (Non-Profit Organizations)
  • نجی کاروبار، (Private Businesses)
  • پروفیشنل ادارے ، (Professional Institutions)
  • کوئی دوسرے رضامند افراد (Any other willing Individuals)
  • یا اسٹیبلشمنٹ(or Establishment)

3) گرانٹ:۔

گرانٹ ایک اور طریقہ ہے جس سے طلباء اپنے کالج کے فنڈز  فراہم کر سکتے ہیں۔ کسی کو گرانٹ واپس کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ جو کہ ایک اسکالرشپ میں بھی ایسا ہی ہے  مندرجہ ذیل میں سے کوئی بھی گرانٹ حاصل کر سکتا ہے:

  • فیڈرل گرانٹ
  • رساستی گرانٹ
  • این جی اوز ، نجی کاروبار، مخیر حضرات اور غیر منافع بخش اداروں کی طرف سے مقامی گرانٹ
  • ورک اسٹدی پروگرام (جس میں کسی طالب علم کو جز وقتی ملازمت مل جاتی ہے جو اس طالب علم کی کالج فیس اور دیگراخراجات کی ادائیگی میں مددگار ثابت ہوتی ہے)

مالی اعانت کے مذکورہ بالا وسائل اس بات کو یقینی بنانے میں معاون ثابت ہوں گے کہ آپ کالج میں مالی اعانت کے قابل ہیں۔ اس سے طلباء کو اسٹوڈنٹ لون حاصل کرنے  کی ضرورت بھی کم رہ جاتی ہے۔

4) مختلف اختیارات دیکھیں:۔

دوایسے طریقے ہیں جس سے ایک شخص طلباء کے قرض حاصل کر سکتا ہے۔ وہ انہیں وفاقی حکومت اور نجی طلبہ کے قرضوں کے ذریعے حاصل کر سکتے ہیں۔ یہ دو اختیارات اس بات کو یقینی بناتے ہیں کہ طالب علم کو مالی مدد ملے جو وہ اپنے کالج کے اخراجات ادا کرے گا۔ وفاقی طلباء کے قرضے وہی ہوتے ہیں جو محکمہ تعلیم سے حاصل ہوتے ہیں جب کہ نجی طلباء کے قرضے وہ ہوتے ہیں جو آن لائن قرض دہندگان، کریڈٹ یونینز، اور بینکوں سے حاصل کیے جاتے ہیں۔

5). فیڈرل اسٹوڈنٹس لون:۔

فیڈرل اسٹوڈنٹس لون  وہ ہوتے ہیں جو حکومت کی طرف سے دئیے ْجاتے ہیں اور دوسری قسموں کے سلسلے میں اگر طالب علموں کے قرض، ان میں کم شرح سود ہے۔ ان کی واپسی کی بہتر اور لچکدار شرائط بھی ہیں۔ فیڈرل اسٹوڈنٹس لون کی دو اقسام ہیں:۔

براہ راست سبسڈی لون:۔ 

یہ انڈرگریجویٹ طالب علم کو دیا جاتا ہے جو مالی مدد کی ضرورت کو ظاہر کرتا ہے۔ ان قرضوں میں ، حکومت اس سود کی ادائیگی کرے گی جو قرض آپ نے وصول کیا ہے جب کہ آپ ابھی اسکول میں ہی ہیں اور گریجویشن کے بعد چھ ماہ تک۔

براہ راست غیر منقطع لون:۔

یہ کسی بھی طالب علم کو مالی امداد کی ضرورت کا جائزہ لئے بغیر دیئے جاتے ہیں۔ ان قرضوں میں ، طالب علم اس سود کے ساتھ ساتھ قرض کی ادائیگی کرتا ہے جو قرض اس نے اپلائی  کیا ہے۔

یہ پڑھیں:۔ پاکستانی طالب علم کا GRE میں عظیم کارنامہ

یہ مشورہ دیا جاتا ہے کہ آپ اپنے پہلے اختیار کے بطورفیڈرل اسٹوڈنٹ لون کے لئے جائیں۔ کیونکہ یہ نسبتاً  کم شرح سود پر ہیں اور حکومت اس کے لئے شرائط و ضوابط اور ریٹس طے کرتے ہے اور اس کے علاوہ طلباء کے پاس دیگر فوائد اور تحفظ بھی ہوتا ہے جو ان قرضوں کی ادائیگی میں معاون ثابت ہوں گے۔ یہ ضروری ہے کہ آپ پہلے دیکھ بھال کر فیصلہ کریں کہ آپ کون سے لون کے لئے اپلائی کرنے جارہے ہیں ۔

اسے ضرور پڑھیں:۔کیمسٹری میں نو سالہ پاکستانی لڑکی کا ورلڈ ریکارڈ

فیڈرل اسٹوڈنٹس لون کے بارے میں سب سے اہم بات یہ ہے کہ آپ کے پاس چھ گریجوایشن کے بعد چھے ماہ کی مدت ہے گریجو ایشن کے بعد یہی وقت ہے کہ آپ سے توقع کی جاتی ہے کہ آپ نوکری تلاش کریں گے اور اپنے قرض کی ادائیگی شروع کریں گے۔ ملازمت ملنے کے بعد ، آپ دوبارہ ادائیگی کے منصوبے کے لئے درخواست دے سکتے ہیں اور آپ ایک ماہانہ بل کا انتخاب کر سکتے ہیں۔ جو آپ آرام سے ادا کر سکتے ہیں۔

6) نجی اسٹوڈنٹس لون:۔

اگر آپ فیڈرل اسٹوڈنٹس لون سے جو رقم وصول کر رہے ہیں وہ کافی نہیں ہے تو، آپ نجی اسٹوڈنٹس لون کے لئے اپلائی کر سکتے ہیں۔ یہ بینکوں اور دیگر مالیاتی اداروں سے لئے جا سکتے ہیں اور ان قرضوں کی ایک خاص بات یہ ہے کہ ان کی شرح سود زیادہ ہے اور یہ آپ کو اسکول ، کالجز میں رہتے ہوئے بھی ادا کرنا پر سکتی ہے۔اندر گریجویٹ طلباء خود سے نجی اسٹوڈنٹس لون حاصل نہیں کر سکتے ہیں۔ انہیں ایک ایسے شخص کی مدد کی ضرورت ہوتی ہے جو قرض کیاادائیگی میں آپ کی مدد کرے گا۔وہ شخص کوئی رشتہ دار یا والدین میں سے ایک ہو سکتا ہے اور ان کی ساکھ مثبت ہونی چاہیے اور آمدن بھی اچھی ہونی چاہیے۔ ان قرض دہندگان میں کنسائنز رکھنے کا انتخاب ہوتا ہے کیونکہ وہ قرض پر ڈیفالٹ ہونے کے امکانات کو کم کرنے میں مدد کریں گے۔

7) معلومات جمع کریں:۔

نجی اسٹوڈنٹ لون یا فیڈرل اسٹوڈنٹ لون میں سے آپ کسی ایک کے لیے درخواست دینے کا انتخاب کرتے ہیں تو آپ کو اتنی معلومات جمع کرنی ہوں گی جس سے لون حاصل کرنے کا عمل آسان ہو جائے گا۔ان میں یہ شامل ہیں۔

  • ایڈجسٹ شدہ مجموعی آمدنی:۔ کسی کو اپنے اور اپنے والدین کی ایڈجسٹ شدہ مجموعی آمدنی جمع کروانے کی ضرورت ہے۔
  • IRS ٹیکس گوشوارے:۔ آپ کاغذی یا IRS ڈیٹا کی بازیافت کے طریقہ میں سے کسی ایک کا انتخاب کر سکتے ہیں ۔ آپ کو پچھلے دو سالوں سے ٹیکس گوشورے ظاہر کرنا چاہیے اور آپ اپنے والدین کے ٹیکس گوشوارے بھی جمع کروائیں۔ 
  • سوشل سیکیورٹی نمبر اور تاریخ پیدائش
  • اثاثہ کی معلومات: مطلوبہ اثاثہ کی معلومات میں آپ کے اکاؤنٹ میں بیلنس شامل ہو سکتا ہے۔ 
  • جن اسکولوں میں آپ ایڈمیشن لینا چاہتے ہیں اور گرانٹ اور وظائف سے متعلق جامع معلومات جو آپ کو مل چکی ہیں۔

8) ایف اے ایف ایس سی کو پُر کریں:۔

اگر آپ فیڈرل اسٹوڈنٹ ایڈ  ( ایف اے ۔ ایف ایس اے) کے لئے مفت درخواست بھرنا چاہتے ہیں تو آپ کو مالی مدد ملنے کا واحد طریقہ ہے کہ آپ کو جو امداد ملے گی اس کا تعین کرنے کے لیے اس کا استعمال کیا جائے گا۔ ایف اے ۔ایف ایس اے کو مکمل کرنا بہت آسان ہے لیکن آپ کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ اسے جلدی سے پُر کریں کیوںکہ جو لوگ اسے جلدی سے بھرتے ہیں انہیں مالی امداد کے زیادہ مواقع مل جاتے ہیں۔

ایف اے ایف ایس اے کو مکمل کرنا اسے کے بعد آپ کو اسٹوڈنٹس ایڈ رپورٹ فراہم کرے گا ۔ یہ آپ کی ساری مالی معلومات اور متوقع خاندانی شراکت (ای ایف سی) ہے۔ اس سے قرض دینے والے کو اندازہ ہو گا کہ آپ کے اہل خانہ آپ کی تعلیم میں کتنا حصہ ڈالیں گے۔ اگر طلباء کی امدادی رپورٹ درست نہیں ہے تو اسے FAFSA میں جا کر آپ آسانی سے تبدیل کر سکتے ہیں۔

9)  اپنے سی ایس ایس پروفائل پُر کریں:۔

ایک اور قسم کی امداد جو آپ حاصل کر سکتے ہیں وہ اسکول سے ادارہ جاتی امداد ہے تاہم اس کے لئے آپ کو اپنا سی ایس ایس پروفائل پر کرنا چاہیے ۔ آپ اپنا اکاؤنٹ بنائیں اور اسکول کا انتخاب کریں۔ اور دیگر معلومات جیسے مالی اور اضافی معلومات جو اثاثوں کے متعلق ہے جمع کروائیں آپ اپنا سی ایس ایس پروفائل کالج بورڈ جا کر جمع کروائیں گے۔

10) اپنے مالی امداد کے ایوارڈ لیٹر کا تجزیہ کریں:۔

ایک بار جب آپ مذکورہ بالا اقدامات مکمل کر لیں گے ، آپ کو ایک مالی اعانت کا اشتہار موصول ہو گا جو آپ کو ملنے والی امداد کی رقم کے بارے میں بتائے گا، یہ آپ کو وہ رقم بتائے گا جو آپ کو اپنے اسکو ل میں ادا کرنے کی ضرورت ہو گی، جو قرض دستیاب ہیں اور جو رقم آپ اسکالرشپ یا گرانٹ سے حاصل کی ہو گی ۔ آپ کو لیٹر موصول ہونے کے بعد شرائط کو قبول کرنے کے لیے اس پر دستخط کرنا ہوں اور اسے مالی امداد کے دفتر میں بھیج دیں گے۔

11) نجی اسٹوڈنٹس لون کے لئے فیصلہ کریں:۔

کسی کو معلوم ہو سکتا ہے کہ انہیں حکومت اور اسکول سے ملنے والی امداد سے زیادہ مالی امداد کے لئے درخواست دینے کی ضرورت پڑ سکتی ہے اسے کے  لئے نجی اسٹوڈنٹس لون کےلئے اپلائی کرنا ہو گا۔ آپ کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ مناسب شرائط لیتے ہوئے کسی کو منظور کرنے سے پہلے آپ مختلف قرض دہندگان کا تجزیہ کریں۔ آپ کو بہت ساری معلومات قرض دینے والے کو جمع کرانا ہوں گی۔ اور پھر یہ بتانا ہو گا کہ آپ کتنا ادھار لینا چاہتے ہیں اور جس اسکول میں آپ جانے میں دلچسپی رکھتے ہیں ۔ رقم جمع ہونے سے پہلے آپ کو کچھ وقت درکار ہوگا اس لئے جلد سے جلد فیصلہ کریں اور درخواست جمع کروائیں۔

12)۔ آخری اقدام اسٹوڈنٹ لون کے لئے اپلائی کریں:۔

اب آپ کو معلوم ہو چکا ہے کہ آپ کے پاس کافی معلومات اکٹھی ہو چکی ہیں اور آپ اسٹوڈنٹس لون کے لئے اپلائی کر سکتے ہیں۔ اور اب آپ کے پاس ایک راستہ ہے جس کے ذریعے آپ اپنی فیس ادا کر سکتے ہیں ۔ آپ کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ آپ جو رقم لے رہے ہیں اس کو ادا کرسکتے ہیں اس لئے اس کو کم سے کم کریں جب آپ اپنے قرض کی ادائیگی شروع کریں گے تو یہ آپ کی مالی مدد کرے گی۔ 

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: